May 182011
 

 

محبت
تتلیوں سے رنگ، کلیوں سے خوشبو، ہوا سے تازگی، دریاﺅں سے روانی اور زندگی سے امنگ کشید کی جائے تو محبت وجود میں آتی ہے۔ یہ الفت، حسن و عشق ، ہجر و وصال، غم و الم، سمندرکی گہرائیوں میں چھپا ایک گوہر ہے، جس میں چاہت جیسا انمول موتی موجود ہے۔ محبت ایک دھنک ہے، جس میں ہر رنگ نمایاں ہوتا ہے۔ محبت صرف عاشق کا مرتبہ ہی نہیں بڑھاتی بلکہ محبوب کی قدرومنزلت میں اضافہ کرتی ہے۔
محبت شاعری کی اساس ہے اور شاعر محبت کے پیامبر ہےں۔ شاعر ان پیغامات کو خوبصورت لفظوں میں پروکر غزل کے سانچے میں ڈھالتے ہیں مگر محبت اندھیروں اور بربادیوں کی نامہربان دیوی بھی ہے، جس کی زد میں آنے والے زندہ تو رہتے ہیں مگر تاعمر دل و جان کا نشان نہیں پاتے۔ محبت خوابوں اور خواہشوں کی راہ گزر ہے ، جو ہرروز نئے خواب اور آرزووں کو جنم دیتی ہے۔ محبت میں گرفتار ہونے کے بعد دل ہر لمحہ اک نئی آرزو کر بیٹھتا ہے۔

 Posted by at 4:40 am

Sorry, the comment form is closed at this time.